Urdu

سکاکائی آئل: بالوں کا ڈاکٹر

سکاکائی برصغیر پاک و ہند کے جنگلات میں پائی جانے والی ایک جھاڑی ہے۔ اسے اردو اور ہندی میں سکاکائی، تامل میں سیکا، تیلگو سیکایا اور انگریزی میں (Soap pod)سوپ پوڈ کہا جاتا ہے۔ اس کا سائنسی نام Acacia concinna اکیسیا کونسینا ہے۔یہ جھاڑی بالوں کی نشوونما کے حوالے سے جانی جاتی ہے۔ اس لئے اسے ہیئر پلانٹ بھی کہا جاتا ہے۔

سکاکائی آئل کے فوائد
سکاکائی آئل انٹی فنگل، انٹی بیکٹیریل اور دافع سوزش ہونے کے باعث بالوں اور جلد کیلئے کئی فوائد رکھتا ہے۔ اس کے ان گنت فائدوں میں سے چند ایک یہاں بیان کئے جا رہے ہیں۔

بال گھنے، لمبے اور تندرست بنائے
سکاکائی آئل میں آملہ اور ریٹھا شامل کر کے یہ مکس تیل سر پر لگانے سے بالوں کی جڑیں مضبوط ہوتی ہیں اور رفتہ رفتہ بال گرنا بند ہوجاتے ہیں۔ یہ تیل بالوں کی سفیدی کو بھی دور کرتا ہے اور اس کے استعمال سے بال لمبے، سیاہ، چمکدار اور نرم و ملائم ہو جاتے ہیں۔

جوؤں اور خشکی سے نجات دلائے
سکاکائی آئل کی طاقتور انٹی فنگل اور انٹی مائکروبیل خصوصیات بالترتیب کھوپڑی اور بالوں سے خشکی اور جوؤں کو دور کرنے میں کلیدی کردار ادا کرتی ہیں۔ یہ مؤثر طریقے سے خشکی کو دور کرتا ہے لیکن کھوپڑی سے ضروری چکنائی کو نقصان نہیں پہنچاتا، اس طرح خشک کھوپڑی کے اُن مسائل کو دور کرتا ہے جو بالآخر خشکی پیدا ہونے کا سبب بنتے ہیں۔ اس کا استعمال سر سے خشکی، جوؤں اور ان کی وجہ سے پیدا ہونے والی مستقل خارش کو ختم کرتا ہے۔

انفیکشن کا خاتمہ کرے
سکاکائی کا تیل اپنی مؤثر طبی خصوصیات کے باعث سر کی جلد پر خوشگوار اثرات مرتب کرتا ہے، کیمیائی شیمپو کے برعکس، جو سوجن یا حساس جلد پر جلن پیدا کر سکتا ہے، سکاکائی ٹھنڈک کا احساس دے کر جلد پر انفیکشن کو ختم اور درد کم کرتا ہے۔

بدہضمی اور پیٹ کے امراض کیلئے
سکاکائی کی پوڈز(پوڑیاں، ڈوڈے) مفید طبی خصوصیات کے حامل ہوتی ہیں جن کے استعمال سے بدہضمی، پیٹ کے درد اور پیٹ کے دیگر امراض کا خاتمہ ہوتا ہے۔ اس سے ہاضمہ کا نظام بھی بہتر ہوتا ہے۔ اس کو استعمال کرنے کیلئے سکاکائی کی پوڈر(ڈوڈوں) کو بیجوں سے خالی کر لیں اور چھلکے کو پانی میں بھگو دیں، اچھی طرح گلنے کے بعد شان کر پانی پی لیں، کچھ دیر اس کے مسلسل استعمال سے پیٹ کے جملہ امراض ٹھیک ہو جاتے ہیں۔

مسوڑھوں کا محافظ
سکاکائی اپنی انٹی بیکٹیریل خصوصیتات کی وجہ سے دانت اور مسوڑھوں کے انفیکشن کی روک تھام میں معاون ہے۔ اس کا استعمال دانت خراب ہونے اور ان پر میل کی نقصان دہ تہہ جمنے سے روکتا اور مسوڑھوں کو تندرست رکھتا ہے۔ اس کیلئے سکاکائی کا تین چمچ رس لیں اور اسے ابال کر ماؤتھ واش تیار کریں۔ اس ماؤتھ واش کے باقاعدگی سے غراغراے کریں، ایسا کرنے سے نہ صرف مسوڑھے تندرست رہیں گے کہ بلکہ منہ اور گلہ بھی ممکنہ انفیکشن سے بچا رہے گا۔

جلد کی دیکھ بھال کا نسخہ
قوی انٹی بیکٹیریل ہونے کے ناطے، سکاکائی جلد کے مختلف انفیکشن جیسے خارش وغیرہ کے علاج میں بھی کافی کارآمد ثابت ہوتا ہے۔ اس کا استعمال جھریوں اور باریک لکیروں جیسے عمر بڑھنے کے آثار کو بھی کم کرتا ہے۔ اس مقصد کیلئے بادام اورہلدی کا پاؤڈر ایک چائے والا چمچ، اور شہد ایک چائے والاچمچ ایک یا دو چائے کے چمچ سکاکائی پاؤڈر میں مکس کریں۔ ایک دن چھوڑ کر اس کریم کی چہرے پر لیپ کریں اور ہلکا ہلکا رگڑیں، اس سے آپ کے چہرے کی جلد نرم وملائم اور چمکدار ہو جائے گی۔

نوٹ: یہ مضمون عام معلومات کے لیے ہے۔ قارئین اس حوالے سے اپنے معالج سے بھی ضرور مشورہ لیں۔

سکاکائی کے تیل اور اس سے متعلق معیاری اور خالص مصنوعات خریدنے کیلئے کلک کریں: