Urdu

لونگ کھانوں کی مہک ہی نہیں، دوائی بھی ہے

پاکستان کا کوئی گھر ایسا نہیں ہو گا کہ جہاں پر لونگ کا استعمال نہ ہوتا ہو۔ لونگ نہ صرف کھانوں میں مہک اور ذائقے کے لیے استعمال کیا جاتا ہے بلکہ یہ ادویات میں استعمال کی جاتی ہے۔ ماہرین نے اس چھوٹی سی شے کے کئی اہم خواص دریافت کیے ہیں جو انسانوں میں شفا کی وجہ بن سکتے ہیں۔

لونگ کی تاریخ:

لونگ (انگریزی: Clove) لونگ ایک درخت کے خوشبودار پھولوں کی کلیاں ہیں۔ یہ جزائر ملوک، انڈونیشیا کا مقامی پودا ہے اور عام طور پر ایک مصالحے کے طور پر استعمال کیا جاتا ہے۔ لونگ تجارتی طور پر انڈونیشیا، بھارت، مڈغاسکر، زنجبار، پاکستان، سری لنکا اور تنزانیہ میں کاشت کیا جاتا ہے۔لونگ برصغیر میں پکوان میں شامل کے جانے والے مصالحوں کا خاص جزو ہے۔

اِس کا درخت چھوٹے قد کا ہوتا ہے۔اِس کے پتے لمبے، نوکیلے اور خوشبودار ہوتے ہیں۔ درخت کو نو سال کی عمر کے بعد پھول آنے لگتے ہیں اور اِنہی پھولوں کی کلیوں کو کِھلنے سے پہلے ہی توڑ کر خشک کر لیا جاتا ہے اور پھر خشک حالت میں یہ لونگ کہلاتے ہیں۔ لونگ کا پھول آدھ اِنچ کے قریب لمبا اور خوشبودار ہوتا ہے۔

لونگ کی تاریخ کا قدیمی ثبوت 1721 قبل مسیح سے ملتا ہے جب شام کے کھنڈروں میں سے ایک جار کے اندر محفوظ شدہ لونگ دریافت ہوئے۔ چین میں تیسری صدی قبل مسیح میں ہان سلطنت کے دور میں لونگ کا تذکرہ ملتا ہے جب عوام میں لونگ چبانے اور منہ کی تازگی کو بہتر بنانے کے لیے استعمال کیا جاتا رہا۔

قرون وسطی کے زمانہ میں مسلم تاجروں نے بحیرہ ہند کی تجارت کے راستے سے بھی لونگ کی فراہمی وسطی ایشیائی ممالک اور افریقی ممالک تک ممکن بنائے رکھی۔ ابن بطوطہ نے بھی لونگ کی تجارت کا ذِکر کیا ہے۔ عربی کے ادبی شاہکار الف لیلہ میں بھی مذکور سندباد جہازی کے واقعے میں پتا چلتا ہے کہ وہ ہندوستان سے عرب ممالک میں لونگ کی تجارت کیا کرتا تھا۔

Essential Life

ماہرین نباتات کا خیال ہے کہ لونگ کا درخت دنیا میں آباد قدیمی درختوں میں سے ایک ہے اور اِس کی موجودگی کے آثار 2000 قبل مسیح سے بھی ملتے ہیں۔ 1770ء میں فرانسیسی ماہر نباتات پیئرے پوئیور نے لونگ کا ایک درخت جو اُس نے بڑی احتیاط سے چرا لیا تھا، جزائر ملوک سے آئل دی فرانس (ماریشس) پہنچایا جہاں سے وہ درخت زنجبار پہنچا دیا گیا اور زنجبار میں اِس درخت کی موجودگی اٹھارہویں صدی کے ساتویں عشرے سے قبل نہیں ملتی اور اِسی نایاب درخت کے باوجود زنجبار لونگ کی تجارت کرنے والا بڑا ملک بنا۔1602ء سے 1799ء تک ولندیزی ایسٹ انڈیا کمپنی بھی جزائر ملوک، انڈونیشیا، ملائیشیا سے لونگ کی تجارت یورپ اور ہالینڈ سمیت یورپی ممالک میں کرتی رہی۔ولندیزی ایسٹ انڈیا کمپنی کے دور میں جزائر ملوک کے تمام علاقوں میں لونگ کی کاشت کے لیے ہر علاقے میں لونگ کے درخت بکثرت لگائے گئے۔

لانگ میں پائے جانے والے کیمیائی اجزا:
ماہرین غذائیت کے مطابق لونگ میں وٹامن سی، فائبر، مینگنیز، اینٹی آکسیڈنٹ ایجنٹ بھرپور مقدار میں پایا جاتا ہے۔ جبکہ ماہرین کے مطابق لونگ ایک زبردست اینٹی آکسیڈنٹس چیز ہے۔لونگ کے تیل میں یوجینول 72–90 فیصد ہوتا ہے جسے جسمانی امراض کے لیے بہترین تصور کیا جاتا ہے۔

لونگ کے طبی فوائد:

ماؤتھ واش:
تحقیق سے معلوم ہوا ہے کہ منہ کی اندرونی صحت اور تندرستی برقرار رکھنے کے لئے لونگ اہم کردار ادا کرتی ہے۔ سائنس دانوں نے لونگ کے ماؤتھ واش کا موازنہ دنیا کے بہترین ماؤتھ واش سے کیا تو انکشاف ہوا کہ لونگ سے بنے ماؤتھ واش دنیا کے مہنگے ماؤتھ واش سے بہتر اور مؤثر ہوتے ہیں۔ لونگ سے بنے ماؤتھ واش، مسوڑھوں کی خرابی اور دانتوں پر جمے میل کو کم کرنے میں بہت معاون ثابت ہوئے ہیں۔ لونگ میں موجود طاقتور اجزا منہ کے جراثیم ختم کرکے جلن اور سوزش کو بھی کم کرتے ہیں۔

کینسر کے خلاف ایک ہتھیار:
لونگ اینٹی آکسیڈنٹس سے بھرپور ہوتی ہیں۔ اینٹی آکسیڈنٹس خلیاتی سطح پر ٹوٹ پھوٹ اور ڈی این اے کے بگاڑ کو روکتے ہیں۔ ماہرین کے مطابق اینٹی آکسیڈنٹس کی جتنی مقدار نصف چمچے لونگ کے پاؤڈر میں ہوتی ہے اس کی مقدار نصف کپ بلیوبیری سے بھی زیادہ ہوتی ہے۔ ایک اور تحقیق سے معلوم ہوا ہے کہ لونگ کئی طرح کے سرطانی خلیات کے پھلنے پھولنے کی رفتار کو کم کرتی ہے اور بڑی آنت کے سرطان میں بھی لونگ مؤثر ثابت ہوئی ہے۔ اس عمل کو کینسر کے شکار چوہوں پر بھی آزمایا گیا ہے جس سے معلوم ہوا کہ اس سے سرطانی رسولیوں کو کم کرنے میں حیرت انگیز کامیابی حاصل ہوسکتی ہے۔ کینسر تیزی سے پھیلنے والا مرض ہے اور لونگ اس عمل کو روکتی ہے۔

Essential Life

ذیابیطس بھگائے:
ایک تحقیق سے ظاہر ہوا ہے کہ لونگ سے حاصل ہونے والا ایک جزو نائگریسن چوہوں میں انسولین جذب ہونے کا عمل بڑھاتا ہے اور انسولین سے مزاحمت کو کم کرتا ہے۔ یہ چوہے ذیابیطس کے شکار تھے اور نائگریسن لبلبے کو بہتر بناکر بی ٹا سیل کی کارکردگی کو بھی بڑھاتے ہیں۔
ماہرین نے لونگ کی افادیت معلوم کرنے کے لیے اس کا پاؤڈر بنایا اور چوہوں کو کھلایا۔ جن چوہوں کو لونگ کا سفوف دیا گیا ان میں دیگر چوہوں کے مقابلے میں شکر کی مقدار کم ہوئی جو خون میں گلوکوز کی شرح کے تحت ناپی گئی تھی۔ واضح رہے کہ اس تجربے میں چوہوں کے دونوں گروہ ذیابیطس کے شکار تھے۔

موٹاپا دور کرے:
لونگ میں موجود مفید اجزا پورے جسم اور خصوصاً جگر پر چربی بننے کے عمل کو کم کرتے ہیں۔ چوہوں پر کیے گئے تجربات سے انکشاف ہوا ہے کہ لونگ سے حاصل شدہ بعض کیمیکل موٹاپے کو روکتے ہیں اور پورے بدن میں چربی کو زائل کرتے ہیں۔

قدرتی اینٹی سیپٹک:
لونگ ایک قدرتی اینٹی سیپٹک جز ہے جس کے استعمال سے انسانی جسم میں موجود نقصان پہنچانے والے بیکٹیریا کا خاتمہ ہوتا ہے

لونگ کے پانی کے صحت پر جادوئی اثرات:
ہر گھر کے کچن میں موجود گرم مسالے کے طور پر استعمال کی جانے والی لونگ کے بے شمار طبی فوائد ہیں، لونگ کا تیل دانتوں کے درد میں بے حد مفید ہے جبکہ اس کا پانی بنا کر استعمال کرنے کے بھی بہت سے فوائد ہیں۔

شوگر کے مریضوں کے لیے یہ نہایت مفید ہے، اس کے استعمال سے شوگر لیول متوازن رہتا ہے۔
لونگ کے پانی کے استعمال سے آپ دانتوں کی کئی بیماریوں سے بچ جاتے ہیں۔
لونگ کا پانی متلی، الٹی کی کیفیت ہونے کے علاوہ الٹیوں اور معدے کے دیگر مسئلوں میں مفید ثابت ہوتا ہے۔
لونگ اینٹی بیکٹیریل جز ہے اس کے پانی کے استعمال سے کئی طرح کی الرجی اور موسمی انفیکشن میں افاقہ ہوتا ہے۔
وزن میں کمی کے خواہشمند افراد لونگ کا پانی استعما ل کر کے فاضل چربی سے چھٹکارہ پا سکتے ہیں۔
سردیوں میں لونگ کا قہوہ پینے سے موسمی بیماریوں سے نجات ملتی ہے۔
لونگ کے اینٹی آکسیڈنٹ جز ہونے کے سبب اس کے پانی کے استعمال سے جسم سے مضرِ صحت اجزاء کا اخراج ہو تا ہے جس کے صحت پر براہ راست مثبت نتائج آتے ہیں۔

Essential Life

وزن میں کمی کے لیے لونگ کا پانی بنانے کا طریقہ:
ہم وزن لونگ، دار چینی اور چھوٹی الائچی کو پیس لیں، ایک کپ پانی ابالیں اور اس میں ایک چائے کا چمچ یہ پاؤڈر شامل کر لیں، پانی مزید ابلنے پر چولہا بند کردیں، اب اسے چھان کر نوش فرمائیں۔
ذائقہ بہتر بنانے کے لیے اس پانی لیموں کے چند قطرے یا شہد بھی شامل کیا جا سکتا ہے۔

چھوٹی الائچی، دار چینی اور لونگ کے اس پاؤڈر کا استعمال صبح نہار منہ بھی کیا جا سکتا ہے، ایک چائے کا چمچ پھانکنے کے بعد نیم گرم پانی کا گلاس پی لیں۔اس سفوف کے استعمال سے پیٹ کی چربی کو تیزی سے پگھلنے میں مدد ملے ملتی ہے۔

رات کو سونے سے پہلے 2 لونگ کھانے کے فوائد:
اگر آپ روزانہ رات کو دولونگ کھا کر ایک گلاس پانی پیتے ہیں تو اس سے تیزابیت، قبض، پیٹ، درد اور پیٹ سے جڑی سبھی پرابلمز جڑ سے ختم ہو جائیں گی۔لونگ میں کیلشیم بھرپور مقدار میں پایا جاتا ہے۔ اس کے استعمال سے ہڈیاں بھی مضبوط ہوتی ہیں باقاعدگی سے اس کا استعمال کرنے سے جوڑوں کے درد کی پرابلم بھی نہیں ہوتی۔ ہر روز دو لونگ کھانے سے ہمارا خون صاف ہوجاتا ہے۔ جس سے ہمارے جسم کی ساری گندگی ختم ہو جاتی ہے۔

احتیاط: لونگ کے تیل کے جہاں بہت سے فوائد ہیں وہاں اس کے کچھ منفی اثرات اور نقصانات بھی رپورٹ ہوئے ہیں۔ لونگ کا تیل آنکھوں، سانس کی نالی اور جلد میں سوزش پیدا کرسکتا ہے۔ یہ فوری طور پر بھڑک سکتا ہے اور اگر اس کا تیل پی لیا جائے تو جان لیوا بھی ثابت ہوسکتا ہے۔

نوٹ: یہ مضمون عام معلومات کے لیے ہے۔ قارئین اس حوالے سے اپنے معالج سے بھی ضرور مشورہ لیں۔

 

لونگ سے متعلق اصلی اور خالص مصنوعات خریدنے کیلئے کلک کریں۔

 

Related Posts