Urdu

کابلی چنے: پروٹین حاصل کرنے کا قدرتی ذریعہ

کابلی چنوں کو گاربنزو پھلیاں ( Chickpeas) بھی کہتے ہیں۔انھیں سفید چنے بھی کہا جاتا ہے۔ ہم عام طور پر انھیں اپنی پھلیوں کے اندر نہیں دیکھتے ہیں، لیکن چنے کو Peas اور Beans کی طرح ہی جانا جاتا ہے۔ بعض لوگ چنوں کو دالوں کا بھائی سمجھتے ہیں لیکن ایسا نہیں ہے۔

کابلی یا سفید چنے کا استعمال ہر گھر میں ہی کیا جاتا ہے اکثر لوگ اِن چنوں کی چاٹ بناکر کھاتے ہیں تو کوئی اُبلے ہوئے انڈوں اور آلو کے ساتھ سفید چنوں کا سالن پکاتا ہے اور کچھ لوگ تو سفید چنوں کا پلاؤ بھی بناتے ہیں۔

چنے دو رنگ کے ہوتے ہیں، ایک سفید اور دوسرے کالے چنے۔ ان دونوں کی افادیت بھی کافی حد تک مختلف ہوتی ہے، ان کے استعمال سے صحت پر مختلف اثرات مرتب ہوتے ہیں جبکہ انہیں اکثر ایک ہی جیسا سمجھا جاتا ہے، سفید چنوں کے فوائد سے متعلق ماہرین کا کہنا ہے کہ سفید چنے پروٹین حاصل کرنے کا ایک بہترین ذریعہ ہے۔

کابلی یا سفید چنے میں پائے جانے والے کیمیائی اجزا:
سفید چنوں کے بارے میں ماہرین کہتے ہیں کہ سفید چنے پروٹین لینے کا ایک بہترین ذریعہ ہے،ان کو فائبر، میگنیشیم، پوٹاشیم، پروٹین، آئرن اور زنک جیسی غذائی اجزاء کا پاور ہاؤس بھی کہا جاتا ہے۔ان میں وٹامن بی، وٹامن سی اور دیگر مرکبات پائے جاتے ہیں۔

سفید چنوں کے طبی فوائد:
چنا وٹامن سے بھرپور غذاہے اور یہ کئی طبی فوائد رکھتا ہے جب کہ اس میں فولاد، وٹامن بی 6، میگنیشم، پوٹاشیم اور کیلشیم کافی مقدار میں موجود ہوتا ہے۔

چنا وزن کم کرنے کے لیے:
چنے میں ریشہ (فائبر) اور پروٹین کثیر مقدر میں ملتے ہیں، پھر اس کا گلائسیمک انڈکس بھی کم ہے۔ اسی بنا پر چنا وزن کم کرنے کے سلسلے میں بہترین غذاہے، تحقیق کے مطابق جو خواتین و حضرات دو ماہ تک چنے کو اپنی بنیادی غذا رکھتے ہیں ان کا وزن 8پونڈ تک کم ہوجاتا ہے۔

چنا نظام ہضم کے لئے مفید:
چنے میں ریشے کی کثیر مقدار اُسے نظام ہضم کے لیے بھی مفید ہے۔ یہ ریشہ آنتوں کے جراثیم (بیکٹیریا) کو مختلف مفید تیزاب مہیا کرکے انہیں قوی بناتا ہے۔ نتیجتاً وہ آنتوں کو کمزور نہیں ہونے دیتے اور انسان قبض و دیگر تکلیف دہ بیماریوں سے محفوظ رہتا ہے۔

چنا کولیسٹرول کی مقدار کو قابو میں رکھتا ہے:
چنا اپنے مفید غذائی اجزاء کی بدولت فطری انداز میں کولیسٹرول کی سطح کم کرتے ہیں،چنے میں فولیٹ اور میگنیشم کی خاصی مقدار پائی جاتی ہے اور یہ وٹامن خون کی نالیوں کو طاقتور بناتے اور انہیں نقصان پہنچانے والے تیزاب ختم کرتے ہیں۔ نیز اس کے کھانے سے دل کا دورہ پڑے کا امکان بھی کم ہوجاتا ہے۔

چنا گوشت کا نعم البدل:

چنے کو گندم کی روٹی کے ساتھ کھایا جائے تو انسان کو گوشت یا ڈیری مصنوعات جتنی پروٹین ملتی ہے۔

چنا ذیابیطس کے مریضوں کے لئے انتہائی مفید:
چنے اور دیگر دالیں کھانے والے ذیابیطس ٹو کا شکار نہیں ہوتے کیونکہ ان میں زیادہ ریشہ اور کم گلائسیمک انڈکس ہوتے ہیں جس کے باعث ان میں موجود کاربوہائیڈریٹ آہستہ آہستہ ہضم ہوتے ہیں، اس عمل کی وجہ سے خون میں شکر کی مقدار ایک دم اوپر نیچے نہیں ہوتی بلکہ متوازن رہتی ہے۔

چنا توانائی میں اضافے کا سبب:
چنے میں شامل فولاد میگنیز انسانی قوت بڑھانے میں معاون ثابت ہوتے ہیں اسی لیے چنا حاملہ خواتین اور بڑھتے ہوئے بچوں کے لیے بڑی مفید غذا ہے اور یہ انہیں مطلوبہ غذائیت فراہم کرتا ہے، چنا ہڈیوں اور سرطان جیسے موذی مرض سے بھی محفوظ رکھنے میں معاون ثابت ہوتا ہے۔

جسم کے پٹھوں کی صحت:
غذائی ماہرین کے مطابق چنوں میں غذائیت زیادہ پائی جاتی ہے اسی لیے انہیں بالوں، ناخنوں جلد اور جسم کے پٹھوں کی صحت کے لیے بہتر غذا قرار دیا جاتا ہے۔

سفید چنوں کا استعمال:

سفید چنوں کا سالن:
سفید چنوں کو غذا میں شامل کرنے کا سب سے آسان اور عام طریقہ یہ ہے کہ آپ اِن کا سالن بنالیں، رات بھر چنوں کو پانی میں بھگو کر رکھ دیں اور پھر صبح پریشر کوکر یا پھر کسی بھی برتن میں اِن چنوں کو اُبال کر مصالحے وغیر ہ ڈال کر آپ اِن کا سالن بنالیں اور پھر روٹی یا چاول کے ساتھ کھائیں، سفید چنوں کا سالن نا صرف مزیدار ہوگا بلکہ یہ آپ کی صحت کے لیے بھی بہت مفید ہوگا۔

چنوں کا سوپ:
سفید چنوں کو آپ سوپ کے طور پر بھی غذا میں شامل کر سکتے ہیں، آپ چکن یا سبزیوں کا کوئی بھی سوپ پکائیں اور پھر اُس میں اُبلے ہوئے چنے شامل کرکے اُس سوپ کو پی لیں، یقین کیجیے یہ سوپ ذائقہ دار ہونے کے ساتھ ہی اچھی صحت کے لیے بھی بہت اچھا ہوگا، آپ ورزش کے بعد بھی ہلکی پھلکی بھوک میں چنوں کا سوپ پی سکتے ہیں اور رات کو کھانے میں بھی یہ سوپ لے سکتے ہیں۔

چنوں کی چاٹ:
چنوں کی چاٹ کا نام سُنتے ہی سب کا دل للچاتا ہے کہ ابھی سامنے چاٹ آجائے اور ہم کھالیں، چنے کی چاٹ مزیدار ہونے کے ساتھ ہی صحت مند غذا بھی ہوتی ہے کیونکہ اِس میں ٹماٹر، کھیرے، پیاز، آلو اور دیگر موسم کے حساب سے سبزیاں شامل ہوتی ہیں اور اِس کو چٹ پٹا بنانے کے لیے مصالحے بھی شامل کیے جاتے ہیں، اِس لیے چنا چاٹ کو صحت مند غذا کہا جاتا ہے۔

نوٹ: یہ مضمون عام معلومات کے لیے ہے۔ قارئین اس حوالے سے اپنے معالج سے بھی ضرور مشورہ لیں۔

معیاری اور خالص مصنوعات خریدنے کیلئے کلک کریں:

Related Posts