Urdu

کلونجی کا تیل: سرد، خُشک موسم میں جھڑتے بالوں کا علاج

صحت پر منفی اثرات سے بھرپور غذاؤں کا استعمال اور زندگی گزارنے کے غلط طریقوں کے سبب ہر دوسرا شخص بالوں کی کمزوری اور جھڑنے کی شکایت کرتا نظر آتا ہے، ایسے میں کلونجی کا تیل بالوں کو گرنے سے روکنے میں مدد فراہم کر کے گنج پن سے بچاؤ اور بالوں کی بہتر نشوونما ممکن بناتا ہے۔

جِلد، ناخن اور بالوں سے جڑے امراض کا علاج کرنے والے ماہرین کا کہنا ہے کہ کلونجی کے دانے انسانی صحت کے لیے بے حد مفید ہیں، ان کی افادیت نا صرف طب بلکہ سائنسی تحقیقات سے بھی ثابت شدہ ہے، جہاں کلونجی کے کھانے کے نتیجے میں مجموعی صحت پر اِن گنت فوائد حاصل ہوتے ہیں وہیں اس سے حاصل ہونے والے تیل کا براہ راست استعمال بھی بے حد مفید ثابت ہوتا ہے۔

ماہرین کے مطابق خوبصورت اور مضبوط بال حاصل کرنے کے لیے اِن کی جڑوں میں تیل کی مالش کرنا  بہت اہمیت رکھتی ہے، یہی وجہ ہے کہ گھر کے بڑے بزرگ بھی سر پر تیل کی مالش کرنے کا مشورہ دیتے ہیں۔

ماہرین کے مطابق کلونجی کا تیل بالوں کی جڑوں کو مضبوطی اور نمی فراہم کرتا ہے، کلونجی کے نیم گرم تیل سے اگر بالوں  کی جڑوں میں مساج کیا جائے تو بال مضبوط، لمبے گھنے اور ملائم ہو جاتے ہیں اور اگر کلونجی کے تیل میں  چند اجزا کا اضافہ کر لیا جائے تو یہ جھڑتے بالوں کا نتائج کُن علاج ثابت ہوتا ہے۔

جھڑتے بالوں کو روکنے کے لیے سستے داموں آسانی سے دستیاب اجزا سے تیل بنانے کا طریقہ:

کلونجی کے تیل سے فارمولا تیل بنانے کے لیے ہم وزن مقدار میں سرسوں اور زیتون کا تیل لے کر دونوں کو اچھی طرح سے مکس کرلیں۔

اب اس میں سرسوں اور زیتون کے تیل کی آدھی مقدار میں بادام اور ناریل کا تیل ڈال کر شامل کر لیں اور نیم گرم کر کے 2 سے 3 چمچ کلونجی شامل کر کے کانچ کی بوتل میں منتقل کر لیں۔

اس بوتل کو ایک ہفتے تک روزانہ کی بنیاد پر تیز دھوپ کی تپش میں رکھیں اور شام ہوتے ہی چھاؤں میں رکھ دیں، ایک ہفتے بعد اس کا استعمال شروع کر دیں۔

ہر بار اس تیل کے استعمال سے قبل اس فارمولا تیل میں وٹامن ای آئل کے چند قطرے بھی ملا لیں۔

بالوں کی گرنے کی تعداد اگر زیادہ ہے تو اس تیل میں باجرہ ڈال کر اِس تیل کو 2 دِن کے لیے مزید دھوپ میں رکھ دیں اور بعد ازاں اس کا استعمال کریں۔

گرتے بالوں کے علاج کے لیے اِس تیل کا استعمال شرط ہے، بہترین نتائج کے لیے اس تیل کا استعمال کم از کم ہفتے میں دو بار ضرور کریں۔

کلونجی کے اس فارمولے میں گِرتے بالوں کے تمام مسائل کا حل موجود ہے، اس تیل کے استعمال کے نتیجے میں بالوں کی نشونما کا عمل بھی تیز ہو جائے گا۔

کلونجی کا تیل مختلف بیماریوں کیلئے کیسے استعمال کیا جائے؟

کلونجی کا تیل بہت سے جسمانی امراض میں انتہائی مفید ہے۔ بعض امراض میں شفاء حاصل کرنے کے لئے مستقل مزاجی کی ضروری ہے۔ کلونجی کے تیل کا استعمال بعض ایسی چیزوں کے ساتھ کیا جاتا ہے جو باآسانی پنساری یا یونانی طب کی دکان سے حاصل کی جاسکتی ہے۔

کلونجی کا تیل مختلف بیماریوں کے لئے درج ذیل طریقوں پر استعمال کیا جاتا ہے۔

درد شقیقہ (آدھے سرکار درد)
روزانہ کلونجی کے تیل کا ایک قطرہ درد والے حصے کے مخالف ناکے کے نتھنے میں ڈال دیں۔ کلونجی کا تیل دس قطرے روز پئیں۔

سرد رد
درد کے وقت کلونجی کا تیل سر اور کنپٹیوں ملیں، دس قطرے کلونجی کا تیل ایک چمچ شہد میں ملاکر پئیں۔

درد کے وقت کلونجی کا تیل سر اور کنپٹیوں پر ملیں

مرگی
کلونجی کا تیل ایک قطرہ دائیں ناک کے نتھنے میں ڈالیں، اگلے دن بائیں ناک کے نتھنے میں ڈالیں۔ روزانہ دس قطر ے کلونجی کا تیل ایک چمچ شہد میں ملا کر پئیں۔

لقوہ فالج
روزانہ کلونجی کے تیل کا ایک قطرہ متاثرہ حصہ کے مخالف نا کے نتھنے میں ملا لیں اور کلونجی کا تیل دس قطرے ایک چمچ شہد پانی میں ملا کرپئیں۔

قوت حافظہ
نسیان (بھولنا) ایک چمچ شہد، کلونجی کا تیل دس قطرے کے ساتھ پی لیں۔دار چینی کے تین چار ٹکڑے دن بھرمیں چوسا کریں۔

ابتدائی موتیا
اگر موتیا ابتدائی حالت میں ہوتو روزانہ کلونجی کا تیل ایک قطرہ آنکھ میں ڈالیں۔

کان کا درد
کلونجی کا تیل ایک قطرہ نیم گرم کرکے کان میں ٹپکائی ں۔

کان کی سوزش
کلونجی کا تیل اور زیتون کا تیل ہم وزن اُبال کر نیم گرم کرکے چند قطرے کا ن میں ڈالیں۔

دانت کا درد
کلونجی کا تیل آٹھ قطرے، آٹھ چمچ کلونجی دانہ، تھوڑا سا سرکہ اُبال کر کلیاں کریں، متاثرہ دانت پر لونگ رکھیں۔

دانتوں کا میل
نمک آگ میں جلا کر باریک پیس لیں، اس میں چند قطرے کلونجی کا تیل اور چند قطرے سرسوں کا تیل ملا کر دانتوں پر ملیں۔

بلغم
السی ایک تولہ کوٹ کر پاؤ بھر پانی میں جوش دیں جب پانی آدھ رہ جائے تو چھان کر چودہ قطرے کلونجی کا تیل اور دو چمچ ایک گلاس شہد میں ملا کر پئیں۔

نوٹ: یہ مضمون عام معلومات کیلئے ہیں، قارئین اس حوالے سے اپنے معالج سے بھی مشورہ کر لیں۔

کلونجی سے متعلق اصلی اور خالص مصنوعات خریدنے کیلئے کلک کریں